ظالم شوہر نے بیوی کی شرم گاہ کاٹ ڈالی وجہ ایسی کہ سب ہی توبہ توبہ کرنے لگے

ظالم شوہر نے بیوی کی شرم گاہ کاٹ ڈالی وجہ ایسی کہ سب ہی توبہ توبہ کرنے لگے

پاکستان میں اب بھی بعض ایسے علاقے موجود ہیں جہاں پر اس اکیسویں صدی میں بھی خواتین کی حیثیت پاؤں کی جوتی سے زیادہ نہیں سمجھی جاتی اور شوہر جب چاہیں اور جیسا چاہیں ان عورتوں کے ساتھ سلوک کر سکتے ہیں انہیں ان عورتوں کا مالک تصور کیا جاتا ہے جن کو اس بات کا اختیار ہوتا ہے کہ وہ اپنی بیوی کے ساتھ کسی بھی قسم کی زيادتی روا رکھ سکتے ہیں اور کسی دوسرے کو ان کے اس خانگی معاملے میں کسی بھی قسم کی دخل اندازی کا اختیار نہیں ہوتا ۔


ایسا ہی ایک واقعہ ڈیرہ غازی خان کے قبائلی علاقے میں پیش آیا جہاں بارڈر پولیس فورس نے ایک آدمی کو گرفتار کیا جس پر الزام تھا کہ اس نے اپنی بیوی سے چھگڑے کے دوران اس کی شرم گاہ کاٹ ڈالی ۔ جب کہ اس کی بیوی کو بازیاب کروا کر علاج کے لیۓ ہسپتال داخل کروا دیا گیا ہے

تفصیلات کے مطابق اس عورت کے باپ کا کہنا تھا کہ وہ کسی کام سے اپنے بھائی کے ہمراہ اپنی بیٹی کے گھر کے سامنے سے گزر رہا تھا تو اس کو اپنی بیٹی کے رونے چلانے کی آوازیں آئيں جب اس نے گھر کے اندر داخل ہو کر حالات معلوم کرنے کی کوشش کی تو اس کی بیٹی کے کمرے کا دروازہ اندر سے بند تھا ۔

دروازہ توڑ کر جب وہ اندر داخل ہوۓ تو ان کی بیٹی خون میں لت پت پڑی ہوئی تھی اور ان کے داماد نے اپنی بیوی کی شرم گاہ کو تیز دھار آلے سے کاٹ ڈالا تھا ۔ ملزم کا کہنا تھا کہ اس نے اپنی بیوی سے سونے کی بالیاں مانگیں جس پر اس نے انکار کر دیا اس پر اس نے غصے میں آکر یہ مکروہ فعل کر ڈالا ۔

جب کہ اس حوالے سے پڑوسیوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان دونوں میاں بیوی میں اولاد نہ ہونے کے سبب اکثر جھگڑا رہتا تھا جس کے بعد یہ آدمی اسی طرح اپنی بیوی کو تشدد کا نشانہ بناتا تھا اس حوالے سے لڑکی کے باپ کا کہنا تھا کہ اس ظلم میں صرف ان کا داماد ہی نہیں اس کا ایک ساتھی بھی ملوث ہے ۔

پولیس نے لڑکی کے والد کی درخواست پر ملزم کو گرفتار کر لیا ہے اور اس کے خلاف مقدمہ درج کر کے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے ۔ تاہم متاثرہ خاتون کی حالت اب خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے ۔

To Top