نظم - سپنے جینا چهوڑ کے میں نے زندہ رہنا سیکھ لیا

نظم – سپنے جینا چهوڑ کے میں نے زندہ رہنا سیکھ لیا

Disclaimer*: The articles shared under 'Your Voice' section are sent to us by contributors and we neither confirm nor deny the authenticity of any facts stated below. Parhlo will not be liable for any false, inaccurate, inappropriate or incomplete information presented on the website. Read our disclaimer.

سپنے جینا چهوڑ کے میں نے…

زندہ رہنا سیکھ لیا…

درد کی دولت مقفل کردی

خود پر ہنسنا سیکھ لیا

پهول،تتلی اور کتاب..

قبر اتارے سارے خواب..

اچها بننا سیکھ لیا..

 

آنکهوں کی نمی پڑهه لے نہ کوئی..

میں نے نین چرانا سیکھ لیا..

سورج کی اب چاہ نہیں

روزن بنانا چهوڑ دیے..

خود سے بهی لڑنا بهول گئی

گهٹن میں رهنا سیکھ لیا

To Top