نظم - نامِ صنم ہی لکھتا رہا ہوں میں

نظم – نامِ صنم ہی لکھتا رہا ہوں میں

حسین لمحوں کو جیتا رہا ہوں میں

گھونٹ  لزت  کا  پیتا  رہا ہوں میں

نشیلی  انکھیوں  کو   من  میں

سرور  مگر   دیتا   رہا   ہوں   میں

 

دل کش چال  پر  آپ  کی جاناں

بے مسلسل ڈھلتا  رہا  ہوں میں

 

خاموش جھیل کنارہ نظروں میں

لبوں  سے  الجھتا  رہا  ہوں  میں

 

بے  بس  چاہت  میں  قُرب  کی

خود سے بچھڑتا  رہا   ہوں  میں

تڑپ تھی نا تھی چاہت کسی کی

جا بجا آپ میں اترتا رہا ہوں میں

 

عمیــر کی  تختیِ  روح  پر  ہر دم

نامِ  صنم  لکھتا  رہا  ہوں  میں

 

Parhlo

Parhlo.com is the leading open platform that represents the voice of youth with viral stories and believes in not just promoting Pakistani talent and entertainment but in liberating Pakistani youth and giving rise to young changemakers!

Posts
Parhlo Newsletter
Parhlo Newsletter

You have Successfully Subscribed!

To Top