دنیا کی تاریخ میں خواجہ سراؤں کا یہ روپ کسی نے نہ دیکھا ہو گا

دنیا کی تاریخ میں خواجہ سراؤں کا یہ روپ کسی نے نہ دیکھا ہو گا

خواجہ سرا یا ہیجڑوں کا شمار انسانوں کی تیسری صنف سے کیا جاتا ہے۔ جس کو معاشرے میں انتہائی تضحیک کی نظر سے دیکھا جاتا ہے۔ کچھ لوگوں کا یہاں تک کہنا ہے کہ اگر ان پر اتفاقا ایک نظر پڑ جاۓ تو دوسری نظر ڈالنے سے اجتناب برتنا چاہۓ ۔ اس قسم کے واضح احکامات حدیث یا قرآن سے ثابت نہیں ہیں۔ مگر معاشرے کے اندر اس تیسری صنف کو انتہائی ذلت کا سامنا ہر دور میں ہوتا رہا ہے۔

اگر اس ذلت کی وجوہات کا سبب جاننے کی کوشش کی جاۓ تو یہ امر سامنے آتا ہے کہ اصل وجہ ان کا خواجہ سرا ہونا نہیں ہے بلکہ اس کی واضح طور پر دو وجوہات ہیں ۔پہلی وجہ ان کی عورتوں والی شکل اور شباہت اختیار کرنا ہے اور دوسری وجہ ان کا گانے بجانے کا پیشہ اختیار کرنا ہے ۔

اس کی وجوہات اس صنف کے لوگ یہ دیتے ہیں کہ چونکہ معاشرے کے لوگ ان کو کوئی باعزت روزگار کا ذریعہ فراہم نہیں کرتے لہذا مجبورا ان کو بھیک مانگ کر یا پھر گا بجا کر اپنا پیٹ پالنا پڑتا ہے۔ یہ صنف معاشرے کے ان لوگوں کی صنف ہے جن کی تعلیم و تربیت کے لۓ کبھی بھی کسی بھی صورت میں کوئی توجہ نہیں دی گئی۔

 

https://www.facebook.com/PakhtoonWorldOffical/videos/1717648054972411/

مگر اب ایک ایسی ویڈیو سامنے آئی ہے جس کے مطابق ان خواجہ سراؤں نے نہ صرف ظاہری طور پر اپنے حلیے کو تبدیل کیا ہے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ وہ اس کا درس اپنے ساتھی خواجہ سراؤں کو بھی دے رہے ہیں کہ وہ اپنی قسمت پر افسوس کرنے کے بجاۓ ایسی وضع قطع اختیار کریں جو اللہ اور اس کے رسول کو بھی پسند ہے۔

ان لوگوں کا یہ جزبہ انتہائی قابل قدر ہے اور معاشرے کے افراد کو نہ صرف اس کو سراہنا چاہۓ بلکہ اس کے ساتھ ساتھ ان کی حوصلہ افزائی بھی کرنی چاہۓ تاکہ وہ معاشرے کے اندر بہتر طور پر اپنا کردار ادا کر سکیں۔ اور خود کو گناہ کی زندگی سے بچا سکیں

To Top