عورتوں کو برہنہ کر کے دیسی انڈوں سے مالش کرنے والے جعلی پیر کے کرتوت سامنے آگۓ

عورتوں کو برہنہ کر کے دیسی انڈوں سے مالش کرنے والے جعلی پیر کے کرتوت سامنے آگۓ

جعلی پیروں کی جانب سے مستقل طور پر ایسے واقعات سامنے آرہے ہیں جس میں وہ لوگوں کی ضعیف العتقادی کے سبب نہ صرف ان سے بھاری رقمیں بٹورتے ہیں بلکہ اس کے ساتھ ساتھ عورتوں کے عصمتوں کے ساتھ بھی کھیلتے ہیں ۔ عورتیں نام نہاد روحانیت کے لبادے میں چھپے ہوۓ ان نامحرموں کے سامنے اپنا ستر پردہ بھی کھول بیٹھتی ہیں بلکہ ان نامحرموں کو اپنے جسم کو چھونے اور اس سے مزے لوٹنے کا کھلا اجازت نامہ بھی دے بیٹھتی ہیں اور ان کے ان جرائم کی پردہ پوشی بھی کرتی ہیں ۔

ایسے ہی ایک پیر صاحب کراچی کے مضافات میں اپنا مکروہ دھندہ چلا رہے ہیں جن کا یہ دعوی ہے کہ میڈیا کی نامور شخصیات اور فوج کے اعلی عہدے دار ان کے پاس اپنا علاج کروانے آتے ہیں اور وہ اور ان کا خاندان گزشتہ ڈیڑھ سو سال سے روحانیت کا یہ مکروہ دھندہ جاری رکھے ہوۓ ہیں ۔

ان جعلی انڈہ پیر کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کے والد کا انتقال نہیں ہوا بلکہ انہوں نے اس دنیا سے ہجرت فرمائی ہے یعنی ان کا فیض و برکات ابھی تک ان کی صورت میں اس دنیا میں جاری و ساری ہے ۔ اس جعلی پیر کا طریقہ واردات بھی انتہائی دلچسپ ہے ۔وہ اپنے آپ کو بیک وقت حکیم ، پیر کہتا ہے ۔

اس کا کہنا تھا کہ پرہیز کے ساتھ ساتھ وہ دم دروداور تعویزوں کے ساتھ علاج کرتا ہے ۔ اس کے بعد اس کا کہنا ہے کہ وہ علاج کے لیۓ دیسی انڈوں کا لیپ بھی لگاتا ہے ۔ اس کے لیۓ اس نے اپنے حجرے کے قریب ہی ایک دکان بھی کھول رکھی ہے جہاں سے مریدین کو ایک سو روپے میں ایک انڈہ دیا کرتا ہے ۔

 

اس کے بعدجعلی پیر صاحب اس انڈے کا لیپ بنا کر ان عورتوں کو نیم برہنہ کر کے ان کے پیٹ پر لگاتے ہیں جو شرعی طور پر کسی صورت جائز نہیں ۔ اس حوالے سے جب جعلی پیر سے دریافت کیا گیا تو انہوں نے جن قرآنی آیات کا حوالہ دیا اس سے ان کی لاعلمی ثابت ہوتی ہے کہ ایک ایسا انسان جو کہ قرآن وسنت سے واقف ہی نہیں کس طرح روحانی علاج کا دعوے دار بن بیٹھا ہے ۔

اس کے بعد عورتوں کے جسم کے نازک حصوں پر دیسی انڈے کا لیپ کر کے یہ جعلی پیر دین کی کون سے خدمت انجام دے رہا ہے ۔ایسے پیر لوگوں کی جاہلیت کا فائدہ اٹھا کر اپنے دھندے چلا رہے ہیں اور لوگ ان کے ہاتھوں دن رات لٹ رہے ہیں ایسے لوگوں کے خلاف عملی اقدامات کرنا ارباب اقتدار کی اولین ذمہ داری ہے

To Top