عمران خان تیسری شادی کس کے کہنے پر کر رہے ہیں ایک ایسی حقیقت جو ان کے چاہنے والوں پر بجلی بن کر گرے گی

عمران خان تیسری شادی کس کے کہنے پر کر رہے ہیں ایک ایسی حقیقت جو ان کے چاہنے والوں پر بجلی بن کر گرے گی

عمران خان کا شمار اس صدی کے سب سے زیادہ وانٹڈ کنوارے لوگوں میں ہوتا ہے ۔اگرچہ وہ دو شادیا ں پہلے ہی کر چکے ہیں مگر تیسری شادی کے امیدوار ہیں ۔بہت ساری خواتین اس بات کے انتظار میں تھیں کہ شاید اس بار قرعہ فال ان کے نام نکل آۓ ۔ کچھ لوگوں کا خیال تھا کہ شاید اس بار جمائما ایک بار پھر خان صاحب کی بیوی کا عہدہ سنبھالیں گی ۔

مگر میڈیا چینلز پر آنے والی ان خبروں نے دھماکہ کر دیا کہ اس بار عمران خان نے بشری مانیکا عرف عام پنکی کا انتخاب کیا ہے ۔ریحام خان کو طلاق دینے کے بعد خان صاحب اور بشری کے بارے میں چہ مگوئیوں کا سلسلہ تو شروع ہو ہی چکا تھا جس کے بارے میں قندیل بلوچ نے بھی مرنے سے قبل اپنے ایک انٹرویو میں ذکر کیا تھا

مگر سال کے آغاز کے پہلے دن جب عمران خان کا موبائل فون سارا دن بند رہا تو اس نے میڈیا والوں کو اس بات کا موقع دیا کہ وہ یہ اعلان کر سکیں کہ عمران خان سال کے آغاز ہی میں ایک نۓ بندھن میں بندھ چکے ہیں جس کی اگرچہ تردید دونوں جانب سے آچکی ہے مگر اس کے باوجود ہر فرد کا یہ ماننا ہے کہ دھواں وہیں سے اٹھتا ہے جہاں چنگاری ہوتی ہے ،

بشری مانیکا جو کہ پانچ بچوں کی ماں ہیں جن میں سے تین بیٹیوں کی شادی کر چکی ہیں دو بیٹے تعلیم کے سلسلے میں بیرون ملک مقیم ہیں ۔وہ اپنے شوہر سے طلاق لے چکی ہیں ۔ان کے سابقہ شوہر کی جانب سے آنے والے متضاد بیانات اس معاملے کو مزید مشکوک بنا رہے ہیں ۔ایک تو ان کا وہ ویڈیو پیفام ہے جس میں انہوں نے جیو نیٹ ورک کی مزمت کی ہے ۔

اور دوسرا ان کے وہ بیانات ہیں جو جیو کے میزبان طلعت حسین کے ساتھ ان کی چیٹ کا حصہ ہیں جس میں انہوں نے اس امر کو تسلیم کیا کہ جس دن سے عمران خان نے ان کے خاندان کے ہاتھوں بیعت کی اس دن سے ان کی خانگی زندگی تلاطم کا شکار ہو گئی تھی ۔اسی سبب انہیں اپنی تیس سالہ بیاہتا بیوی کو طلاق دینی پڑی ۔

اگر بشری مانیکا کو طلاق عمران خان کے سبب ہوئی تو پھر کوئی وجہ نہیں کہ وہ عمران خان کو اپنانے سے انکار کریں گی ۔جب کہ اس بات کو عمران خان نے اپنے نوٹیفیکیشن کے ذریعے خود بھی تسلیم کیا ہے کہ انہوں نے بشری مانیکا کے ساتھ شادی کرنے کی درخواست ان کو کی ہے ۔

اگر عمران خان کے ماضی پر نظر ڈالی جاۓ تو یہ امر واظح ہوتا ہے کہ عمران خان اس معاملے میں بہت خوش قسمت رہے ہیں کہ انہوں نے جب بھی کسی خاتون کی جانب ہاتھ بڑھایا اس نے کبھی ان کو ٹھکرایا نہیں ہے ۔مگر جتنی جلد بازی کے ساتھ خان صاحب تعلق بڑھاتے ہیں اتنی ہی تیزی کے ساتھ اس کو توڑ بھی ڈالتے ہیں ۔

بظاہر یہ نظر آرہا ہے کہ عمران خان ملکی الیکشن سے قبل اس بات کے لیۓ پر امید ہوتے ہیں کہ وہ آئندہ وزیر اعظم ہوں گے اور اسی سبب وہ جلد بازی میں کسی ایسی خاتون کا اتخاب کرتے ہیں جو فرسٹ لیڈی کی صورت میں ان کے ساتھ چل سکے مگر جب الیکشن کا نتیجہ ان کی امیدوں کے بر خلاف نکلتا ہے تو پھر ان کا گزارا اس خاتون کے ساتھ ہونا دشوار ہو جاتا ہے ،

ان حالات میں ہم صرف یہ دعا ہی کر سکتے ہیں کہ اس بار عمران خان کا یہ فیصلہ پائدار ہو اور زندگی بھر کے لیۓ ہو صرف الیکشن کے لیے نہ ہو

 

To Top