ابھی انسانیت باقی ہے، کشمیری معمر خاتون نے دنیا کو پیغام دے دیا

ابھی انسانیت باقی ہے، کشمیری معمر خاتون نے دنیا کو پیغام دے دیا

جمو کشمیر سے تعلق رکھنے والی 87 سالہ معمر خاتون نے حج کے لیے جمع کی گئی 11لاکھ روپے کی  رقم کورونا فنڈ ریلیف کے لیے عطیہ کردی ۔ ان کا یہ پیغام اقوام عالم کے لیے ایک سبق ہے۔ قید و بند کی صعوبتیں جھیلتے کشمیر کے باسی اپنے دل مین انسان اور انسانیت کا درد رکھتے ہیں اور مسلمان ہونے کی حیثیت سے حقوق العباد کے فرائض نہیں بھولتے

خالدہ بیگم کا عطیہ

Twitter

خالدہ بیگم نے حج کی رقم عطیہ کردی

دنیا بھر میں پھیلے کورونا  وائرس  نےجموں کشمیر میں بھی اپنے پنجے گاڑے ہوئے ہیں ۔اور پہلے سے لاک ڈاون جمو کشمیر کو مزید  پابندیوں  میں جکڑ لیا ہے۔ جمو کشمیر کی رہائش پذیر خالدہ بیگم بھی  ہر مسلمان کی طرح حج پر جانے کی خواہش رکھتی تھیں۔ مگر موجودہ صورتحال  میں انہوں نے  اپنے لوگوں  کی مدد کے لیے اپنی جمع کی گئی 11 لاکھ (بھارتی 5 لاکھ)روپے کی رقم کورونا فنڈ ریلیف میں عطیہ کردی ۔

11لاکھ کا چیک

Opindia

مودی بھول گئے انسانیت کا درس مگر کشمیری نہین!!

خالدہ بیگم نے اپنے اس احسن اقدام سے دنیا اورنریندر مودی کو ہمدردی اور رحم دلی کیا ہوتی ہے بتا دیا ہے۔اور دنیا کوپیغام دے دیا ہے کہ  234 دنوں کے لاک ڈاؤن نے بھی  کشمیریوں کے حوصلوں کو پست نہیں کیا ہے۔ مودی کے مظالم نے ان کے عزم کو آج بھی نہیں ہرا یا ہے  اورانسانیت ابھی بھی زندہ ہے پیسا ہی سب کچھ نہیں ہے۔اللہ کی راہ میں  اس کے بندوں کی امداد کرنا احسن اقدام ہے اور اصل میں وہی بڑا انسان ہے ۔

To Top